Monday, April 11, 2016

Likhun main hal ke mazi ke waqeyat likhun

GHAZAL:

🌹 Mai chahta ho ke kuch haal e shakhsiyaat likhun
Likhun main hal ke mazi ke waqeyat likhun

🌹 hawas hy aaj zamane me ishq jis ke liye
Mai unke wasate majno ke tazkeraat likhun

🌹Taraqqi yaafta lekin khasara saath liye
Kaha talak mai ye insaan ke sifaat likhun

🌹Kisi se ishq mohabbat agar kiya mai ne
Mujhe gawara nahi un ki zaat paat likhun

🌹Milega mauqa agar zindagi me yaar kabhi
Guzar rahi hy jo mujh par wo mushkilaat likhun

🌹Agar to chahe hidayat utha kitab e khuda
Tere faham ke liye kiyo mai deeniyaat likhun

🌹Mujhe wo shayeri zeeshan kya sabaq degi
Jahaa mai raat ko din aur din ko raat likhun

غزل:

🌹 میں چاہتا ہوں کے کچھ حالِ شخصیات لکھوں
لکھوں میں حال کے ماضی کے واقیات لکھوں

🌹 ہوس ہے آج زمانہ میں عشق جس کے لئے
میں ان کے واسطہ مجنو کے تذکرات لکھوں

🌹 ترقّی یافتہ لیکن خسارہ ساتھ لئے
کہا تلک میں یہ انسان کے صفات لکھوں

🌹 کسی سے عشق محبت اگر کیا میں نے
مجھے گوارہ نہیں ان کی ذات پات لکھوں

🌹 ملیگا موقہ اگر زندگی میں یار کبھی
گزر رہی ہے جو مجھ پر وہ مشکلات لکھوں

🌹اگر تو چاہے ہدایت اٹھا کتابِ خدا
تیرے فہم کے لئے کیوں میں دینیات لکھوں

🌹 مجھے وہ شاعری ذیشان کیا سبق دیگی
جہاں میں رات کو دن اور دن کو رات لکھوں

No comments:

Post a Comment

Your comments are appreciated and helpful. Please give your feedback in brief.