Tuesday, March 27, 2018

Hum me taqat nahi judaai ki

مجھ سے محفل میں لب کشائی کی
اس    طرح    اس   نے بے وفائی کی

پوچھو    یہ بات    قیدی   سے کوئی
کیا    قدر    ہوتی     ہے     رہائی کی

دوست     کا     کیا    مقام     پائگی
دوستی   جیسی   بھی ہو بھائی کی

ہم    محبت    سے      اتحاد     کریں
بات     بالکل    نہ     ہو     لڑائی کی

کچھ    نے     اپنے     مفاد کی خاطر
کھیت     کھلیان     میں    تباہی کی

مدتوں     بعد       کیا    ملے  ان سے
ہم     میں طاقت     نہیں جدائی کی

اب تو   ذیشان چھوڑ  کے سب کچھ
زندگی     جیو        پارسائی      کی

✍ ذیشان آعظمی

No comments:

Post a Comment

Your comments are appreciated and helpful. Please give your feedback in brief.