Monday, March 19, 2018

Mujhe sochta koi aur hai

ترا      راستہ     کوئی اور ہے
ترا     رہنما    کوئی     اور ہے

تو کیوں  پوجتا   ہے ہراک کو
بجز   اک  خدا   کوئی اور ہے؟

خدا    ہی   مسیحا    ہے    ترا
تو کیوں ڈھونڈتا کوئی اور ہے

خدا   نام    کا   ہو   گیا    کیا
کہ تو   پوجتا    کوئی  اور ہے

مرا    بھی   خدا      کے علاوہ
کہاں     آسرا    کوئی   اور ہے

غلط  فہمی    ہے   میری شاید
مجھے   سوچتا  کوئی  اور ہے

تو ذیشان  کی نظروں  میں ہے
مگر   دیکھتا    کوئی  اور   ہے

✍ ذیشان آعظمی

No comments:

Post a Comment

Your comments are appreciated and helpful. Please give your feedback in brief.