Tuesday, March 27, 2018

Sunati hai muskura ke nagma jidaare kaba Ali Ali

نبی   نے   اعلانیہ   کہا   مومنوں    کا    مولا    علی علی
غدیر خم   میں سبھی   نے دیکھا   خدا کا بندہ علی علی

گلے ملیں   گے تمام    حضرات   کہ     ولادت علی کی ہے
سجے گی   تیرہ    رجب کو  محفل   لگے گا نارہ علی علی

خوشی میں مدہوش ہیں ستارے کہ آسماں پر بھی دیکھئے
فلک پہ   چکر    لگائے    کہتا    ہراک    ستارہ    علی  علی

زمانے    والوں    درود پڑھتے   رہو   کہ تیرہ رجب کے دن
خدا کے    گھر آگیا    ہے    بنتِ اسد   کا  بیٹا   علی علی

جوان   ہو    کر کریگا    دعوی     یہاں  سلونی کا بالیقیں
وہ    پاک   دستِ نبی    پہ   قرآن   پڑھنے   والا علی علی

علی کے    اقوال    پڑھ کے    سمجھو   کلامِ پروردگار کو
کہ جتنی   مبہم    ہیں  آیتیں اس کا بھی سہارا علی علی

سبھی    نے    پوچھا  وہ  کون ہوگا نبی کا داماد دہر میں
اتر کے     زہرہ کے     در پہ     کہنے    لگا ستارہ علی علی

خیالِ باطل      نے     جو     بنایا    اسے  مبارک وہی علی
خدا کی     جو  بہترین     خلقت     وہی   ہمارا علی علی

کسی    کو     موقع اگر    ملے تو   طواف  کرتے سنا کرو
سناتی     ہے     مسکرا کے    نغمہ    جدارِ کعبہ علی علی

دعا     کریں     سب     قبول ہو     بارگاہِ پروردگار  میں
لکھا     جو     ذیشان     نے قلم سے نیا قصیدہ علی علی

✍ ذیشان آعظمی

No comments:

Post a Comment

Your comments are appreciated and helpful. Please give your feedback in brief.